وفاقی اور صوبائی حکومتیں صوبے میں امن و امان بر قراررکھنےمیں نا کام.ملک سکندر خان ایڈوکیٹ

0 142

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جمعیت علماء اسلام کے صوبائی نائب امیر رکن قومی اسمبلی مولوی کمال الدین اور بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ملک سکندر خان ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ زیارت کے عوام اور لیویز شہداء کے لواحقین نے جو چار نکاتی مطالبات پیش کئے ہیں جمعیت علماء اسلام ان کی حمایت میں شانہ بشانہ کھڑی ہے،وفاقی اور صوبائی حکومتیں صوبے میں امن و امان قائم کرنے میں ناکام ہیں، کسی بھی حکومتی نمائندے کا شہداء کے ورثاء سے با مقصد مذاکرات نہ کرنا حکومتی بے حسی کو ظاہر کرتا ہے،زیارت واقعہ پر آل پاریٹرز اجلاس بلائیں گے اور پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے بھی معاملے کو اٹھائیں گے۔ یہ بات جمعیت علماء اسلام کے صوبائی نائب امیررکن قومی اسمبلی مولوی کمال الدین، بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ملک سکندر خان ایڈوکیٹ نے ہفتہ کو کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی اس موقع پر ارکان صوبائی اسمبلی عبدالواحد صدیقی، سید عزیز اللہ آغا، جمعیت علماء اسلام ضلع کوئٹہ کے امیر عبدالرحمن رفیق سمیت دیگر بھی موجود تھے۔ رکن قومی اسمبلی مولوی کمال الدین نے کہا کہ جمعیت علماء اسلام زیارت میں دہشتگردی کے واقعہ میں تین لیویز اہلکاروں کی شہادت کی مذمت کرتی ہے یہ زیارت میں دہشتگردی کا پہلا واقعہ نہیں ہے اس سے قبل میں زیارت میں دہشتگردی کے واقعات ہوئے ہیں اور دو اقوام کو آپس میں بھی لڑوایا گیا انہوں نے کہا کہ زیارت کے عوام اس تشویش میں ہیں کہ انتظامیہ اور فورسز امن کے لئے ہیں یا بد امنی پھیلانے کے لئے جس مقام پر دھماکہ ہوا وہاں پر فورسز کی چوکی موجود ہے ریمورٹ کنٹرول بم سے دھماکے کے بعد دہشتگرد وہاں سے کس طرح فرار ہوئے عوام یہ سوال کرنے میں حق بجانب ہیں کہ انتظامیہ اور فورسز زیارت کو امن نہیں دے سکتیں تو وہ صوبے میں امن کیسے قائم کریں گی

50% LikesVS
50% Dislikes
Leave A Reply

Your email address will not be published.