فیفا ورلڈٹرافی کی دلچسپ کہانی

0 96

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

فیفا فٹبال ورلڈکپ ٹرافی کی پاکستانی قیمت 4 ارب44 کروڑ روپے
1966 میں عوامی نمائش کے دوران چوری ہوئی پھر مل گئی،1970 میں دوبارہ چوری ہوئی جو نہ مل سکی
موجودہ ٹرافی1974ء میں اٹلی کے ڈیزائنر نے تیار کی جو2038 کے ٹورنامنٹ تک جاری رہے گی
یہ ٹرافی 18 قیراط سونے سے تیار کی گئی جس کا وزن 6 کلوگرام ہے اور 75 فیصد حصہ سونے پر مشتمل ہے
ٹورنامنٹ جیتنے والی ٹیم اصلی ٹرافی کے بجائے کانسی سے بنی گولڈ پلیٹڈ نقل دی جاتی ہے،اصلی ٹرافی فیفا کے ورلڈ فٹبال میوزیم میں رکھی جاتی ہے

دوحا:دنیا کی 32 ٹیموں کے درمیان فیفا فٹبال ورلڈکپ 2022 کی ٹرافی جیتنے کے لیے جنگ کا آغاز ہوگیا ہے ،32 ممالک کے کھلاڑی دنیائے کھیل کے اس سب سے بڑے انعام کو حاصل کرنے کا خواب دیکھیں گے۔1930 سے 1938 کے ورلڈکپ جیتنے والی ٹیموں کو جو ٹرافی دی گئی اسے فرانس کے ڈیزائنر Abel Lafleur نے ڈیزائن کیا تھا جسے چاندی سے تیار کیا گیا مگر وہ گولڈ پلیٹڈ تھی۔اس زمانے میں ٹرافی کو ایک یونانی دیوی کے نام پر وکٹری کہا جاتا تھا مگر پھر اس کا نام فیفا کے تیسرے صدر Jules Rimet پر رکھ دیا گیا جن کی جانب سے ورلڈکپ کا خیال پیش کیا گیا تھا۔1938 کے بعد دوسری جنگ عظیم کے باعث 12 سال تک عالمی ایونٹ کا انعقاد نہیں ہوا اور 1950، 1954، 1958 اور 1962 میں Jules Rimet ٹرافی ٹیموں نے جیتی۔مگر برطانیہ میں ہونے والے 1966 کے ورلڈکپ کے ا?غاز سے قبل اس ٹرافی کو ایک عوامی نمائش کے دوران چوری کرلیا گیا جس کو بعد میں ڈھونڈ لیا گیا مگر اس کی ایک نقل ضرور خریدی گئی۔1970 میں ایک بار پھر اصلی Jules Rimet ٹرافی کو چرا لیا گیا جو پھر کبھی نہیں مل سکی جس کے باعث اس وقت ورلڈکپ جیتنے والی ٹیم برازیل کو اس کی نقل دی گئی جو اب اسی کے پاس ہے۔اب فیفا ورلڈکپ میں جو ٹرافی استعمال کی جاتی ہے وہ 1974 کے ورلڈکپ کے لیے ڈیزائن کی گئی تھی۔اٹلی کے ڈیزائنر Silvio Gazzaniga نے اسے تیار کیا۔یہ ٹرافی 2038 کے ٹورنامنٹ تک ٹیموں کو دی جائے گی اور اس کے بعد نیا ڈیزائن متعارف کرایا جائے گا۔پہلے تو ٹورنامنٹ جیتنے والی ٹیم اصلی ٹرافی کو اپنے ساتھ لے جاتی تھیں مگر اب فیفا کی جانب سے فاتح ٹیم کو کانسی سے بنی گولڈ پلیٹڈ نقل دی جاتی ہے۔اصلی ٹرافی فیفا کے ورلڈ فٹبال میوزیم میں رہتی ہے اور خصوصی مواقعوں پر ہی اسے باہر نکالا جاتا ہے۔اس ٹرافی کو چھونے کی اجازت بھی بہت کم افراد کو حاصل ہے۔یہ ٹرافی 18 قیراط سونے سے تیار کی گئی ہے جس کا وزن 6 کلوگرام ہے اور 75 فیصد حصہ سونے پر مشتمل ہے۔اس ٹرافی میں 2 انسان دنیا کو اٹھائے ہوئے نظر ا?تے ہیں اور جب اسے تیار کیا گیا تو اس کی لاگت 50 ہزار ڈالرز کے قریب تھی مگر موجودہ عہد میں یہ 2 کروڑ ڈالرز (4 ارب 44 کروڑ پاکستانی روپے سے زائد) مالیت کی ہے۔درحقیقت یہ دنیائے کھیل کی سب سے مہنگی ٹرافی ہے جس کی قیمت کا مقابلہ کوئی اور ٹرافی نہیں کرسکتی۔

50% LikesVS
50% Dislikes
Leave A Reply

Your email address will not be published.