چینی صدر کے مطا بق ایشیا پیسفک کسی کا” بیک یارڈ” نہیں ہے، چینی وزیر خا رجہ

0 106

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

بیجنگ :چین کے ریاستی کونسلر اور وزیرخارجہ وانگ ای نے کہا ہے کہ چینی صد ر شی جن پھنگ نے ایشیا پیسیفک اقتصادی تعاون کے کامیاب تجربے کا خلاصہ بیان کیا ہے اور اس بات کی نشاندہی کی ہے کہ ایشیا پیسفک خطہ کسی کا” بیک یارڈ” نہیں ہے اور اسے بڑی طاقتوں کی زور آزمائی کا میدان نہیں بننا چاہیے۔ صدر شی جن پھنگ نے یہ بھی اعلان کیا کہ چین اگلے سال تیسری “بیلٹ اینڈ روڈ” بین الاقوامی تعاون سمٹ کے انعقاد پر غور کر رہا ہے جو کہ نئے مواقع لے کر آئے گا اور ایشیا پیسیفک اور دنیا کی ترقی اور خوشحالی میں نئی تحریک پیدا کرے گا۔اتوار کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق چینی وزیر خا رجہ نے ایک پریس کانفرنس میں شرکت کی ہے اور 17ویں جی 20 سربراہی اجلاس اور 29ویں اپیک رہنماوں کے اجلاس میں صدر شی جن پھنگ کی شرکت کے بارے میں بات کی۔ وانگ ای نے کہا کہ ان دوروں کے دوران صدر شی جن پھنگ نے کثیر الجہتی اجلاسوں میں اہم تقاریر کیں اور مختلف ممالک کے رہنماؤں کے ساتھ دوطرفہ بات چیت کی جس سے اس بات کا مضبوط اشارہ ملتا ہے کہ چین عالمی امن اور ترقی کو فروغ دینے اور کھلے پن اور تعاون کو گہرا کرنے کا سلسلہ جاری رکھے گا۔ چینی طرز کی جدید یت کا راستہ صحیح راستہ ہے جو چین اور دنیا کو فائدہ پہنچاتا ہے۔جی ٹونٹی سربراہی اجلاس میں طے شدہ عملی تعاون کے منصوبوں کی فہرست میں چین کی طرف سے تجویز کردہ تعاون کے 15 منصوبوں اور اقدامات کا احاطہ کیا گیا ہے، جو کثیرالجہتی کے لیے چین کی حمایت اور تعاون کی مکمل عکاسی کرتا ہے۔وانگ ای نے کہا کہ صدر شی جن پھنگ نے بالی میں امریکی صدر جو بائیڈن سے بالمشافہ ملاقات کی اور چین امریکہ تعلقات اور عالمی امن و ترقی سے متعلق اہم امور پر واضح اور تفصیلی بات چیت کی جو کہ تعمیری اور تزویراتی تھی۔ #/s#

50% LikesVS
50% Dislikes
Leave A Reply

Your email address will not be published.