کوئٹہ میٹرک کے امتحانات کے لئے سفارش اور اثر و رسوخ کی بنیاد پر اساتذہ کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں

0 274

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ: صدر جونیئر ٹیچرز ایسوسی ایشن بلوچستان محمد یوسف خان کاکڑ و دیگر نے الزام عائد کیا ہے کہ میٹرک کے امتحانات کے لئے سفارش اور اثر و رسوخ کی بنیاد پر اساتذہ کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں اس سلسلے میں پوچھنے پر بلوچستان بورڈ آفس کے عملے کی جانب سے مبینہ طور پر اساتذہ کرام کے بارے میں غلیظ زبان استعمال کی گئی اور ان کے ساتھ تضحیک آمیز رویہ اختیار کیا گیا اگر فوری طور پر بورڈ آفس عملے کے خلاف کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی تو میدان عمل میں نکلیں گے ۔ وہ اتوار کو کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کررہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ گز شتہ روز جونیئر اساتذہ جب بلوچستان بورڈ آفس پہنچے اور میٹرک کے امتحانات میں اساتذہ کی ڈیوٹیوں کے بارے میں استفسار کیا تو بورڈ آفس عملے نے نہ صرف ان کے ساتھ بدتمیزی کی بلکہ اساتذہ کے بارے میں غلیظ زبان استعمال کی جس کی ان کے پاس ویڈیو ثبوت بھی موجود ہیں ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ میٹرک امتحانات میں سفارش اور اثر و رسوخ کی بنیاد پر اساتذہ کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہے کوئٹہ کے ایک ہی سکول کے 14اساتذہ کی میٹرک امتحانات میں ڈیوٹیاں لگائی ہیں جبکہ ایک ایسے سکول کے بھی 7اساتذہ کی ڈیوٹیاں لگائی ہیں جن میں کل اساتذہ کی تعداد 8ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ یہ سب کچھ کنٹرولر بورڈ کی ایماء پر کیا جارہا ہے ، کنٹرولر بورڈ کی مبینہ کرپشن کے سلسلے میں حکومت بلوچستان کی جانب سے سی ایم آئی ٹیم کی ٹیم انکوائری بھی کررہی ہے مگر انکوائری کے دوران بھی وہ اپنے عہدے پر براجمان ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر 72گھنٹے کے دوران اساتذہ کے نامناسب رویہ اختیار کرنے والے بورڈ عملے کے خلاف کارروائی عمل میں لائی گئی تو میدان میں نکلنے پر مجبور ہوں گے جس کی تمام تر ذمہ داری محکمہ تعلیم اور بورڈ آفس عملے پر عائد ہوگی ۔

50% LikesVS
50% Dislikes
Leave A Reply

Your email address will not be published.