ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس کوئٹہ سید فدا حسین شاہ

0 96

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس کوئٹہ سید فدا حسین شاہ نے کہا ہے کہ پولیس نے عاشورہ کے جلوس کے موقع پر سیکورٹی کے فول پروف انتظامات کئے ہیں ماہ محرم میں پولیس نے یکم محرم سے بھر پور اقدامات اٹھائے ہیں اور محرم کے جلوس کے روٹ ، عمارتوں کی سوئپنگ اور سرچنگ کے بعد سیل کردیا جائے گا۔ جلوس کی فضائی نگرانی کے علاوہ سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے مانیٹرنگ کی جائے گی۔ پولیس کی 5 ہزار جبکہ ایف سی کی 2000 نفری کے علاوہ لیویز ، بلوچستان کانسٹیبلری ، اے ٹی ایف ، آر آر جی کے جوان بھی تعینات ہوں گے۔ پاک فوج کی 3 بٹالین کو اسٹینڈ بائی رکھا گیا ہے۔ اور موبائل فون سروس بھی بند رہے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوموار کو یوم عاشورہ کےلئے سیکورٹی پلان کے حوالے سے صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ایس ایس پی آپریشن کوئٹہ عبدالحق عمرانی، ایس پی سیکورٹی محمد نعیم اچکزئی سمیت دیگر آفیسران بھی موجود تھے۔ڈی آئی جی کا کہنا تھا کہ پولیس نے ماضی کی طرح اس سال بھی محرم الحرام کے دوران امن وامان کو برقرار رکھنے کیلئے تمام اقدامات مکمل کرلئے ہیں اور یکم محرم سے ہونے والی مجالس کے لئے انتظامات کئے گئے تھے اور عاشورہ کے جلوس کے راستوں سمیت عمارتوں ، مارکیٹوں، دکانوں کی سرچنگ اور سوئپنگ کے بعد سیل کردیا ہے۔ پولیس نے عاشورہ کے جلوس کے حوالے سے فول پروف سیکورٹی کے انتظامات کئے ہیں۔ سیکورٹی خدشات کے پیش نظر کوئٹہ میں موبائل سروس بند ہے اور پاک فوج کی 3 بٹالین کو اسٹینڈ بائی رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کوئٹہ میں 24 امام بارگاہوں کو انتہائی حساس جبکہ 23 کوحساس قراردیا گیا ہے۔شہر کے57 امام بار گاہوں میں مجالس جبکہ 20 تکیہ خانوں میں زنانہ مجالس ہوئی ہےں ۔ یوم عاشورہ کیلئے پانچ ہزار پولیس اور دو ہزار سے زائد ایف سی اور لیویز اہلکار تعینات کر دئیے ہیں۔ باہر سے آنے والے جلوسوں کو فول پروف سیکورٹی میں لایا جائے گا۔ عاشورہ کے جلوس کی فضائی نگرانی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے کی جائے گی۔ شہر بھر میں 21 مستقل ناکے جبکہ 49 ناکے مجالس کیلئے لگائے گئے ہیں۔ اور شہر کے داخلی اور خارجی راستوں پر چیکنگ کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے ہر آنے جانے والی گاڑی اور لوگوں کو جامہ تلاشی کے بعد آنے جانے کی اجازت ہوگی اس کے علاوہ کسی بھی نا خوشگوار واقعہ سے نمٹنے اور امن کی بحالی کو ممکن بنانے کے لئے پولیس کے موبائل گشت میں بھی اضافہ کیا گیا ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ محرم الحرام کے حوالے سے کوئی تھریٹ نہیں، لیکن مجبوراً ماضی کی صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے سیکیورٹی کیلئے سخت اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ موبائل فون کی صبح سویرے سے لیکر رات گئے تک بندش کے حوالے سے موبائل کمپنیوں کی جانب سے کم وقت کے لئے سروس بند کرنے میں کوئی ٹیکنیکل مسئلہ تھا ہمیں بھی موبائل کی بندش کے باعث شہریوں کی طرح مشکلات درپیش آرہی ہے ہمیں عوام کی مشکلات کا اندازہ ہے آئندہ موبائل فون کی بندش کے حوالے سے بہتر حکمت عملی اپنائیں گے۔

50% LikesVS
50% Dislikes
Leave A Reply

Your email address will not be published.